دہلی

سپریم کورٹ میں منور فاروقی کو ضمانت منظور

سپریم کورٹ نے پیر کو مزاح کار منور فاروقی کو ضمانت دے دی جو مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کی توہین کے ساتھ مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے الزامات کا سامنا کر رہے ہیں۔

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے پیر کو مزاح کار منور فاروقی کو ضمانت دے دی جو مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کی توہین کے ساتھ مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے الزامات کا سامنا کر رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں
نیٹ یوجی تنازعہ، این ٹی اے کی تازہ درخواستوں پر کل سماعت
مسلم خواتین کے لئے نان و نفقہ سے متعلق سپریم کورٹ کا فیصلہ قابل ستائش: نائب صدر جمہوریہ
نیٹ یوجی کونسلنگ ملتوی
سپریم کورٹ نے مقدمے کی سماعت میں 4 سال کی تاخیر پر این آئی اے کی سرزنش کی
ماچرلہ کے ایم ایل اے رام کرشنا ریڈی پر سپریم کورٹ کی پھٹکار

جسٹس بی آر گوہی اور جسٹس سنجے کرول کی بنچ نے فاروقی کی ضمانت کی درخواست کو قبول کرتے ہوئے، مدھیہ پردیش میں لوگوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے لیے ان کے خلاف مختلف ریاستوں میں (اس کیس سے متعلق) درج کی گئی تمام ایف آئی آر کو بھی یکجا کر دیا اور اندور کے توکو گنج پولیس اسٹیشن منتقل کرنے کا حکم دیا۔

ہندوؤں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے ساتھ ساتھ کامیڈین فاروقی پر اپنے ایک پروگرام کے دوران مرکزی وزیر داخلہ مسٹر شاہ کے لیے توہین آمیز الفاظ استعمال کرنے کا بھی الزام ہے۔

کامیڈین فاروقی نے اندور میں ایک شو کے دوران مبینہ طور پر ہندو دیوتاؤں کے لئے توہین آمیز الفاظ استعمال کیے تھے۔ اسے یکم جنوری 2021 کو مدھیہ پردیش پولیس نے ایک شکایت کی بنیاد پر گرفتار کیا تھا۔

ٹرائل کورٹ کی جانب سے ضمانت کی درخواست مسترد ہونے کے بعد فاروقی نے مدھیہ پردیش ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا، وہاں بھی انہیں مایوسی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

انہوں نے ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی تھی۔

a3w
a3w