شمالی بھارت

اخلاق کیس: بی جے پی قائد سنگیت سوم پر 800 روپئے جرمانہ

52سالہ اخلاق کو 28 ستمبر2015ء کو ہجوم نے اس شبہ میں مارڈالاتھا کہ اس نے اپنے مکان میں بیف رکھا ہے۔ اس کیس کی سماعت فاسٹ ٹریک کورٹ میں چل رہی ہے‘ فیصلہ کا انتظار ہے۔

نوئیڈا: گوتم بدھ نگر کی عدالت نے پایا ہے کہ متنازعہ بی جے پی قائد سنگیت سوم نے 2015ء میں ہجوم کے حملہ میں محمد اخلاق کی موت کے بعد حکومت کے امتناعی احکامات کی خلاف ورزی کی تھی۔

بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی کو اخلاق کے گاؤں بسپاڑہ میں دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرنے پر آئی پی سی سکشن188 کے تحت خاطی پایاگیا۔

ایڈیشنل چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ (2) سورج پور کورٹ پردیپ کمارکشواہا نے منگل کے دن سنگیت سوم پر800 روپئے جرمانہ عائد کیا۔

اسسٹنٹ پراسکیوشن آفیسر پریم لتایادو نے پی ٹی آئی کو یہ بات بتائی۔ 52سالہ اخلاق کو 28 ستمبر2015ء کو ہجوم نے اس شبہ میں مارڈالاتھا کہ اس نے اپنے مکان میں بیف رکھا ہے۔ اس کیس کی سماعت فاسٹ ٹریک کورٹ میں چل رہی ہے‘ فیصلہ کا انتظار ہے۔

a3w
a3w