حیدرآباد

مکہ مسجد بم دھماکہ کے 16 سال مکمل، مہلوکین کے ورثاء انصاف سے محروم

تاریخی مکہ مسجد میں بم دھماکہ واقعہ کے 16 سال مکمل ہونے کے باوجود بھی آج تک مہلوکین کو انصاف نہیں ملا اور بم دھماکہ میں ملوث خاطی آج بھی آزاد گھوم رہے ہیں۔

حیدرآباد: تاریخی مکہ مسجد میں بم دھماکہ واقعہ کے 16 سال مکمل ہونے کے باوجود بھی آج تک مہلوکین کو انصاف نہیں ملا اور بم دھماکہ میں ملوث خاطی آج بھی آزاد گھوم رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں
ساوتھ زون کے مختلف مقامات پر قمار بازی اور سٹہ عروج پر!
بچپن کی شادی کا شکار دو نابالغ لڑکیوں کو معاوضہ دینے کا حکم
حیدرآباد میں پولیس کی جانب سے ہوٹلوں کو رات 11 بجے بند کروانے کی شکایت : احمد بلعلہ
حیدرآباد میں مختلف مقامات پرجوئے خانوں کاچلن!
تحریک مسلم شبان: پرانے شہر میں بیروزگاری، غربت، ترک تعلیم سب سے بڑا مسئلہ: دیپاداس منشی

18 مئی 2007 کو جمعہ کی نماز میں ہوئے طاقتور بم دھماکہ میں 9 مصلی جاں بحق اور 60 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔ بعد ازاں اس واقعہ کے خلاف احتجاجیوں پر پولیس فائرنگ سے مسجد کے باہر 5 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

بم دھماکہ واقعہ کے 16 سال مکمل ہونے پر آج مکہ مسجد میں اور اطراف کے علاقہ میں سخت سیکوریٹی بندوبست کیا گیا۔ مسجد کے باب الداخلہ پر مصلیوں اور سیاحوں کی پولیس کی جانب سے تلاشی لی جارہی تھی اور مشتبہ افراد پر سخت نظر رکھی گئی تھی۔

امکانی احتجاج کے پیش نظر اور احتیاطی اقدامات کے تحت ریاپڈ ایکشن فورس کو بھی متعین کیا گیا تھا۔ تاہم حالات معمول کے مطابق اور پرامن رہے۔ واضح رہے کہ 18 مئی 2007 کو بم دھماکہ کے بعد سٹی پولیس نے تقریباً 100 بے قصور مسلم نوجوانوں کو شبہ کی بنیاد پر گرفتار کرکے ان سے سخت تفتیش کرتے ہوئے پوچھ تاچھ کی تھی۔

بعد ازاں انہیں جیل بھی منتقل کیا گیا تھا۔ اس وقت کی راج شیکھر ریڈی حکومت نے اس کیس کی تحقیقات سی بی آئی کے حوالے کی تھی۔ بعد ازاں یہ تحقیقات این آئی اے کے حوالہ کی گئی۔ سی بی آئی نے بم دھماکہ کے واقعہ میں سوامی اسیمانند کے بشمول ہندو تنظیم سے وابستہ 12 ملزمین کو گرفتار کیا تھا ان پر مقدمات بھی درج کئے گئے۔

تاہم این آئی اے عدالت نے سرکاری وکیل کی جانب سے ثبوت پیش نہ کئے جانے پر انہیں بری کردیا گیا۔ بم دھماکہ کے اصل ملزمین کو آج تک سزا نہیں ملی۔ آج بھی مہلوکین اور ان کے ورثاء کو انصاف نہیں مل سکا۔ این آئی اے نے ملزمین کی برأت کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع نہیں ہوئی۔ آج بھی بم دھماکہ کے ملزمین آزاد گھوم رہے ہیں۔

a3w
a3w