بھارتسوشیل میڈیا

‘مدرسوں میں غیرمسلم بچوں کے داخلوں کی تحقیقات کرائی جائیں’

ایسے تمام سرکاری فنڈیڈ/ مسلمہ مدرسوں کی تفصیلی تحقیقات کرائیں جو غیرمسلم طلبا کو داخلہ دے رہے ہیں۔

نئی دہلی: نیشنل کمیشن فار پروٹیکشن آف چائلڈ رائٹس(این سی پی سی آر) نے ریاستوں اور مرکزی زیرانتظام علاقوں کے چیف سکریٹریز کو لکھا ہے کہ وہ ایسے تمام سرکاری فنڈیڈ/ مسلمہ مدرسوں کی تفصیلی تحقیقات کرائیں جو غیرمسلم طلبا کو داخلہ دے رہے ہیں۔

کمیشن نے سفارش کی کہ تمام unmapped مدارس کی میاپنگ کرائی جائے۔ این سی پی سی آر کو شکایتیں ملی تھیں کہ بعض مدرسوں میں ماں باپ کی رضامندی کے بغیر غیرمسلم بچوں کو مذہبی تعلیم دی جارہی ہے۔

ملک میں مختلف ریاستوں میں ایسا ہوا ہے۔ این سی پی سی آر نے کہا کہ دینی مدرسے 3 اقسام کے ہیں مسلمہ‘ غیرمسلمہ اور unmapped۔

حکومت کی طرف سے فنڈ لینے والے یا مسلہ مدارس مذہبی اور کسی حد تک رسمی تعلیم دیتے ہیں۔ شکایتیں ہیں کہ غیرمسلم بچے حکومت کی فنڈنگ والے / مسلمہ مدارس میں پڑھ رہے ہیں۔ چیف سکریٹریز سے کہا گیا ہے کہ وہ اندرون ایک ماہ رپورٹ دیں۔

a3w
a3w