دہلی

منیش سیسوڈیا کی گرفتاری کیخلاف کئی ریاستوں میں احتجاج

دہلی کے ڈپٹی چیف منسٹر منیش سسوڈیا کی سی بی آئی گرفتاری کیخلاف ان کی عام آدمی پارٹی نے آج ملک کی کئی ریاستوں میں احتجاجی مظاہرے منظم کئے۔ سخت سیکوریٹی کے بیچ عام آدمی پارٹی قائدین اور ورکرس نے پیر کے دن کئی ریاستوں میں احتجاج کیا۔

نئی دہلی: دہلی کے ڈپٹی چیف منسٹر منیش سسوڈیا کی سی بی آئی گرفتاری کیخلاف ان کی عام آدمی پارٹی نے آج ملک کی کئی ریاستوں میں احتجاجی مظاہرے منظم کئے۔ سخت سیکوریٹی کے بیچ عام آدمی پارٹی قائدین اور ورکرس نے پیر کے دن کئی ریاستوں میں احتجاج کیا۔

متعلقہ خبریں
جیل میں کجریوال سے دہشت گرد جیسا سلوک: بھگونت مان
سپریم کورٹ جج نے سسوڈیا کی درخواست کی سماعت سے علیحدگی اختیار کرلی
منیش سیسوڈیا کی عدالتی تحویل میں مزید توسیع
منیش سسوڈیہ کی درخواست عبوری ضمانت پر ایجنسیوں کو نوٹس
منیش سسوڈیہ کو تہاڑ جیل سے ایل این جے پی لے جایاگیا

سخت سیکوریٹی کے بیچ چندی گڑھ‘ دہلی‘ بھوپال اور دیگر شہروں میں احتجاج ہوا۔ پیر کی صبح بی جے پی ہیڈکوارٹرس کے اطراف سیکوریٹی بڑھادی گئی تھی جہاں عام آدمی پارٹی نے بہت بڑا احتجاج کرنے کی اپیل کی تھی۔

عام آدمی پارٹی کے ایک عہدیدار نے دہلی میں کہا کہ تمام ارکان اسمبلی سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے حلقہ سے 200 آدمی احتجاج کے لئے اکٹھا کریں۔ دہلی پولیس نے ڈی ڈی یو مارگ کی طرف جانے والی کئی سڑکوں پر رکاوٹیں کھڑی کردیں۔

ڈی ڈی یو مارگ پر بی جے پی اور عام آدمی پارٹی دونوں کے صدر دفاتر واقع ہیں۔ نظم وضبط کی برقراری کے لئے نیم فوجی دستے بھی تعینات کردیئے گئے۔ ڈپٹی چیف منسٹر منیش سسوڈیہ کی گرفتاری کے خلاف عام آدمی پارٹی نے آج یوم ِ سیاہ منایا۔

پارٹی کا الزام ہے کہ پولیس اس کے 80 فیصد قائدین کو گرفتار کرچکی ہے۔ اس نے پوچھا کہ آیا کسی کو بھی 24 گھنٹوں کے لئے ”پولیس حراست“میں رکھا جاسکتا ہے؟۔ پولیس نے اتوار کے دن 50 افراد بشمول عام آدمی پارٹی رکن پارلیمنٹ سنجے سنگھ اور دہلی کے وزیر گوپال رائے کو حراست میں لے لیا تھا جو سی بی آئی دفتر کے قریب احتجاج کررہے تھے۔

اسی دوران چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے پیر کے دن دعویٰ کیا کہ سی بی آئی کے بیشتر عہدیدار اُن کے نائب منیش سسوڈیہ کی گرفتاری کے خلاف تھے لیکن ”سیاسی دباؤ“ میں انہیں ایسا کرنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے بتایا گیا ہے کہ سی بی آئی کے زیادہ تر عہدیدار‘ منیش کی گرفتاری نہیں چاہتے تھے۔

وہ سبھی منیش کی بڑی عزت کرتے ہیں۔ منیش کے خلاف کوئی کیس نہیں ہے لیکن ان پر اتنا زیادہ سیاسی دباؤ تھا کہ انہیں اپنے سیاسی آقاؤں کا حکم ماننا پڑا۔

چیف منسٹر کے دعویٰ پر اپنے ردعمل میں بی جے پی رکن پارلیمنٹ منوج تیواری نے الزام عائد کیا کہ کجریوال حقائق کو توڑمروڑکر پیش کررہے ہیں۔ گزشتہ برس جون میں عام آدمی پارٹی کے ایک اور قائد ستیندر جین کو گرفتار کیا گیا تھا۔

a3w
a3w